اذان سے برتن ناپاک ہونے کا انوکھا واقعہ

سکھوں کے دور حکومت کا آج ہم آپ کو ایک انوکھا واقعہ سناتے ہیں رنجیت سنگھ کے زمانے میں جب پنجاب میں سکھوں کی حکومت تھی۔ رنجیت سنگھ جنگجو طبیعت کے مالک تھے یہ جو واقعہ ہوا آپ کو سنا رہے ہیں یہ رنجیت سنگھ کے دور کا ہے کچھ سے اور رنجیت سنگھ کے دربار میں حاضر ہوئ اور عرض کی کے صبح کے وقت مسلمانوں کی اذان کی وجہ سے ہمارے برتن ناپاک ہو جاتے ہیں تو اس وجہ سے مسلمانوں کو اذان دینے سے روکا جاۓ۔

 

جب رنجیت سنگھ نے یہ واقعہ سنا تو اس نے تاریخ کا انوکھا حکم دیا اور اس نے حکم دیا کہ مسلمانوں کو اذان دینے سے روکا جاۓ لیکن یہ جن سکھوں نے شکایت کی تھی اس کی ڈیوٹی لگائی جائے کہ جس وقت صبح کی اذان ہوتی ہے اور اس وقت یہ مسلمانوں کے گھروں پر جایا کریں اور ان کو اٹھایا کریں کہ آپ کی نماز کا وقت ہو چکا ہے سکھوں نے جب یہ حکم سنی تو ان پر قیامت ٹوٹ پڑی کیونکہ وہ روزانہ مسلمانوں کے گھروں پر جایا کرتی تھے اور ان کو روز صبح نماز کے لیے اٹھایا کرتے تھے جس سے نماز میں مسلمانوں کی تعداد پہلے سے بھی زیادہ بڑھ گئی اور سکھ روز کی مشقت دے کر دربار میں دوبارہ حاضر ہوئے اوررنجیت سنگھ سے ہاتھ جوڑ کر عرض کیا کے مسلمانوں پر اذان کول آ جائے اور اپنا حکم واپس لیا جائےآب مسلمانوں کی اذان سے ہمارے برتن ناپاک نہیں ہوں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *