’’ ایک خاتون جو مجھے بہت پسند تھیں اور پھر۔۔۔۔‘‘شیخ رشید پہلی بار اپنی پسند کے بارے میں بتاتے ہوئے ناقابلِ یقین باتیں کہہ گئے

اسلام آباد(ویب ڈیسک) ویسے تو سیاسی رہنما سیاست کرتے اور بحث و مباحثہ کرتے ہی نظر آتے ہیں یا پھر میڈیا پر منفی طور پر دکھائی دیتے ہیں۔ ان میں سے ہر ایک سیاست دان ایسا ہے جس کی کوئی نا کوئی کہانی تھی، اور اکثر کی یہ کہانی پوری نہیں ہوئی ہے۔ ہماری ویب کی اس خبر میں آپ کو وزیر داخلہ شیخ رشید سے متعلق کچھ ایسی معلومات فراہم کریں گے

جو ہو سکتا ہے آپ نے پہلے نہیں سنی ہوں۔عوامی مسلم لیگ کے سربراہ اور موجود دور میں وزیر داخلہ شیخ رشید کا شمار پاکستان کے سینئیر سیاست دانوں میں ہوتا ہے۔ شیخ رشید نے سیاست کا آغاز اس وقت کیا تھا جب نواز شریف، بے نظیر بھٹو سیاست میں تھے۔ یعنی وہ ان سب رہنماؤں کو جانتے تھے۔ شیخ رشید پاکستانی میڈیا کے وہ مہمان ہیں جو کسی بھی چینل پر چلے جائیں تو اس چینل کی ریٹننگ آ ہی جاتی ہے۔ لال حویلی میں رہائش اختیار کرنے والے شیخ رشید لاہور کے دیسی کھانوں کو اہمیت دیتے ہیں جبکہ انہیں پائے چھولے اور لاہور کی دیسی مرغن غذائیں بھی پسند ہیں۔شادی محبت میں دغا سے متعلق کہتے ہیں کہ میں وہ فلم ہی نہیں دیکھتا جس میں لڑکا لڑکی کو دھوکا دے رہا ہوتا ہے، میں ٹی وی کو ہی بند کر دیتا ہوں جب اس قسم کا کوی سین آتا ہے تو۔ دوستوں سے متعلق کہتے ہیں اس دنیا میں کوئی سکی کا دوست نہیں ہے۔ میرے بھی کوئی دوست نہیں ہے۔خواتین سے متعلق سوال پر شیخ رشید کا کہنا تھا کہ خوبصورت ترین خاتون تھیں اس حویلی کی مالکن اور ایک اور خاتون تھیں جو کہ اوپر مزار کی طرف رہتی تھیں، وہ گلگتی تھیں۔ یہ کہہ کر شیخ صاحب تھوڑا چپ ہوئے اور کہنے لگے میں کیا کہوں، لوگ شادی کو ہی زندگی کا قرینہ سمجھنے لگے ہیں۔ وہ کہتے ہیں نا ایکسپریس ٹرین کسی کا انتظار نہیں کرتی، اسٹیشن سے نکل جاتی ہے۔ جبکہ آئیڈیل خاتون سے متعلق کہتے ہیں کہ مجھے قدرتی حسن والی خواتین پسند ہیں، وہ خواتین جن کے پاس خوبصورتی کے ساتھ ساتھ دماغ بھی ہو۔ وہ کہتے ہیں کہ مجھے خون خوار قسم کی خواتین بہت پسند ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *