ایک لڑکے نے شادی کے لیے بہت ہی عجیب شرط رکھی

ک لڑکے نے شادی کے لیے بہت ہی عجیب شرط رکھی۔کہ میں اس لڑکی کے ساتھ شادی کروں گا۔ جو لڑکی بہت اچھی اور لزیز کھانا پکھانا جانتی ہو۔جس کے لیے کوئی تیار نہیں تھا۔آخر کار اس کے اپنے چچا نے ہی ہمت کی اور اس کو اپنی بیٹی سے شادی کی آفر کر دی۔تو نوجوان نے اپنی شرط چچا کو یاد دلائی جس پر چچا نے اس کو اگلے دن اپنے گھر پر کھانے کی دعوت دی۔ لڑکا جب چچا کے گھر پہنچا تو چچا گھر کے باھر اس کا انتظار کر رھا تھا ،، وہ اسے سیدھا مویشیوں کے جگہ میں لے گیا اور خوب موٹا تازہ پلا ھوا بیل اس کو دکھا کر کہا کہ بیٹا جی ذرا اس کو ذبح کر کے گوشت بنا لاؤ تا کہ تیرے مستقبل کی دلہن اس کو تیرے سامنے ھی پکا کر ھمیں کھلائے ۔

میں نے بھیمینڈھا ذبح کر کے اپنے چچا کی بیٹی کو دیا تھا جس نے اسے بہترین طریقے سے پکا کر مجھے کھلایا تھا اور ھماری شادی ھو گئ تھی نوجوان کا رنگ پیلا پڑ گیا وہ خجالت کے ساتھ بولا کہ چچا جان زمانہ تبدیل ھو گیا ھے ، آج کے جوان مینڈھے ذبح کرنا بھول گئے ھیںآئستہ بولو بیٹا ، اللہ کا ڈالا ھوا پردہ مت پھاڑو ، اللہ تیرے پردے کو قائم رکھے واقعی زمانہ تبدیل ھو گیا ھے ، اب لڑکے مینڈھا ذبح کرنا بھول گئے ھیں اور لڑکیاں کھانے پکانا بھول گئ ھیں ، تعلیم نے دونوں کو کسی قابل نہیں چھوڑا نوجوان نے چپ کر کے چچا کی بیٹی سے شادی کر لی اور ھنسی خوشی رھنے لگے کھانے اور پیزہ باھر سے آتا رھا اور میاں بیوی مزے کرتے رھے نتیجہ وہ بات بولو جو آپ کی اوقات میں ہوں وہ نہ بولو جس پر کل آپ کو شرمندہ ہونا پڑے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *