ایک نوجوان کی نئی نئی شادی ہوئی تو وہ اپنے باپ کے پاس کچھ مشورے لینے گیا تو باپ نے۔۔۔۔۔

ایک لڑکے کی نئی شادی ہو گئی۔ وہ اپنی نئی ازواجی زندگی کے سفر کی دعا کے لیے اپنے والد کے پاس گیا۔ تاکہ اسے نئی ازواجی زندگی سفر کے لیے دعا کریں۔ جب وہ ابا جان کے پاس چلا گیا۔ تو اس نے بیٹے سے کہا کہ کیا آپ کے ساتھ کاغذ اور قلم ہے لڑکا کہتا ہے کہ کیوں بابا جان اس وقت تو میرے ساتھ کوئی کاغذ اور قلم نہیں ہے۔

باپ کہتا ہے : تو جاؤ ایک کاغذ ،قلم اور ربڑ خرید کر لاؤ لڑکا شدید حیرانگی کے ساتھ جاتا ہے اور مطلوبہ چیزیں لیکر آجاتا ہے اور اپنے باپ کے پاس بیٹھ جاتا ہےباپ : لکھوکیا لکھوں جو جی چاہے لکھونوجوان ایک جملہ لکھتا ہےباپ کہتا ہے : اسے مٹا د ونوجوان مٹا دیتا ہےباپ : لکھوبیٹا : خدارا آپ کیا چاہتے ہیں ؟باپ کہتا ہے : لکھونوجوان پھر لکھتا ہےباپ کہتا ہے : مٹا دولڑکا مٹا دیتا ہےباپ پھر کہتا ہے : لکھونوجوان کہتا ہے : اللہ کے لیے مجھے بتائیں یہ سب کچھ کیا ہےباپ کہتا ہے : لکھونوجوان لکھتا ہےباپ کہتا ہے مٹا دو ۔ لڑکا مٹا دیتا ہےپھر باپ اُ س کی طرف دیکھتا ہے اور اُسے تھپکی دیتے ہوئے کہتا ہے :بیٹا شادی کے بعد اریزر کی ضرورت ہوتی ہےاگر ازدواجی زندگی میں تمہارے پاس ربڑ نہیں ہو گا جس سے تم اپنی بیوی کی غلطیاں اور کوتاہیاں کو مٹا کر معاف کر سکواور اسی طرح اگر تمہاری بیوی کے پاس ایریزر نہ ہوا جس سے وہ تمہاری غلطیاں اور ناپسندیدہ باتیں مٹا سکےاگر یہ سب کچھ نہ ہوا توتم اپنی ازدواجی زندگی کا صفحہ چند دنوں میں کالا کر لو گے. اور یہ آپ کی لمبی عمر سفر والی ازواجی زندگی اتنی دیر پر نہ چل سکیں گی۔ مزید خوبصورت تحریر پڑھنے کیلئے ہمارے پیج کو لائک اور شیئر ضرور کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *