بیٹی قیمتی یا زمین؟ بیٹے نے لاجواب کردیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسکز) دوستوں ہم سب بظاہر تو اسلام کو فالو کرتے ہے۔ لیکن جب حق کی بات آجائے۔ تو پھر ہمارے خیالات کچھ اور ہوتے ہے۔ اج ہم اپ کو ایسا واقعہ سناتے ہے۔ ایک بوڑھے باپ نے اپنے سب بیٹوں کو بلایا- سارے بیٹے آس پاس بیٹھ گئے- ایک نظر سب پر ڈالی اور کہنے لگا- “ میں اپنی زندگی گزار چکا ہوں٬ اس سے پہلے کہ آنکھیں بند ہوجائیں اپنی جائیداد تم میں تقسیم کر کے جاؤں گا“-“ سب کو اچھا خاصہ ملے گا مگریہ تمہاری ذمہ داری ہے۔

کہ تم اپنی بہنوں کو مجبور کرو کہ وہ اپنے حق سے دستبردار ہوجائیں  ورنہ  ورنہ کیا ہوگا ابا جان  سب سے چھوٹا بیٹا اپنے والد محترم سے فوری طور پر پوچھ بیٹھا-بوڑھے باپ کے چہرے پر کئی تلخ لہریں آئیں اور آ کر گزر گئیں٬ خشک ہونٹوں پر زبان پھیر کر بولا “ ورنہ تمہارے باپ کی زمین غیروں میں چلی جائے گی“-چھوٹا بیٹا ذرا خود سر سا تھا پوچھنے لگا “ ابا جان بیٹی کو جائیداد سے حق دینےکا حکم تو خدا کا ہے ٬ کیا خدا کو یہ علم نہ تھا کہ بیٹی کو حصہ دینے سے زمین غیروں میں چلی جائے گی؟“ کمرے میں خاموشی چھا گئی- کسی کے کچھ بولنے سے پہلے وہ پھر بول اٹھا “ بیٹی کو زمین دیتے ہوئے آپ کو لگا کہ زمین غیروں میں چلی جائے گی مگر داماد کو بیٹی دیتے ہوئے آپ نے کیوں نہ سوچا کہ بیٹی غیروں میں چلی جائے گی“-بات صرف ایک اچھی اور مثبت سوچ کی ہے کسی کی ھق تلفی سے نہ تو دل کو سکون مل سکتا ہے اور نہ ہی آخرت سنور سکتی ہے۔ دوستوں جس طرح بھائیوں کا حق اپنے باپ کے مال میں اور جائداد میں ہوتا ہے اسی طرح بیٹی کا حق بھی ہوتا ہے۔ اور ہمیں چاہیے کہ ہم اپنے بہن بیٹی کو ضرور اپنا حق دئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *