راؤف کلاسرا کےتہلکہ خیز انکشافات

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان کے سینئر صحافی روف کلاسرا نے کہا کہ جو رپورٹ وفاقی وزیر قومی اسمبلی میں سب کے سامنے لہرا رہے تھے اس رپورٹ میں آصف علی زرداری اور فریال تالپور سنگین الزامات لگائے گئے تھے لیکن سندھ حکومت جان بوجھ کر رپورٹ سب کے سامنے نہیں لانا چاہتےتفصیلات کے مطابق اپنے یوٹیوب چینل پر جاری ویڈیو میں رؤف کلاسرا کا کہنا تھا۔

کہ جو رپورٹ وفاقی وزیر قومی اسمبلی میں لہراتے رہے اس کے بیس صفحے تھے، جو رپورٹ سندھ حکومت کی جانب سے جاری کی گئی اسکے پینتیس صفحات تھے، اب یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ دونوں رپورٹین الگ الگ ہیں، سندھ حکومت نے رپورٹ پبلک نہیں کی تو علی زیدی کے پاس کہاں سے آگئی؟ اس رپورٹ میں بڑے بڑے نام کیسے شامل تھے؟ میرے خیال میں علی زیدی اس وقت اپنے لیے اور اسٹیبلشمینٹ کے لیے مسائل پیدا کر رہے ہیں، لیکن علی زیدی جو رپورٹ دکھا رہے تھے اس پر بھی ان افران کےنام تھے جو سندھ ھکومت کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ پر تھے، اب یہ رپورٹ سب کو تشویش میں مبتلا کر رہی ہے کیونکہ حتمی رپورٹ اسے ہی مانا جاسکتا ہے جس پر سرکاری افسرا ن کے دستخط موجود ہوں۔  پاکستان کے سینئر صحافی روف کلاسرا نے کہا کہ جو رپورٹ وفاقی وزیر قومی اسمبلی میں سب کے سامنے لہرا رہے تھے۔ یہ رپورٹ میرے پاس 2017 سے موجود ہے جو مجھے خفیہ ایجنسی کے اہلکار نے دی تھی۔ اس رپورٹ میں آصف علی زرداری اور فریال تالپور سنگین الزامات لگائے گئے تھے لیکن سندھ حکومت جان بوجھ کر رپورٹ سب کے سامنے نہیں لانا چاہتے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *