سعودی شہری کتنے برس سے مسافروں کومفت کھاناکھلارہاہے ،جانیں گے توداددئیے بغیرنہ رہ سکیں گے

ریاض(نیشنل نیوز) سعودی شہری ایک ایسا شہری بھی جو کہی برسوں سے مسافروں کھانا دیتا ہے۔جس کا نام شیخ محمد بن جروح الشمری ہے الجوف روڈ پر بیٹھک میں 40 برس سے مسافروں کو مفت کھانا کھلا رہا ہے۔سعودی شہری شیخ محمد بن جروح الشمری نے حائل الجوف روڈ پر عجائب گھر نما بیٹھک بنا کر نیا ریکارڈ قائم کیا ہے۔ چالیس برس سے وہ یہاں آنے جانے والوں کی ضیافت بھی کرتے ہیں اور انہیں عجائب گھر نما بیٹھک دیکھنے کا موقع بھی فراہم کررہے ہیں۔

۔سعودی شہری نے اپنی بیٹھک مختکیف چیزے فراہم کی ہے حس میں قہوے، خوشبو اور شیشے کے لیے استعمال ہونے والی خوبصورت اور نادر اشیا سے سجا رکھا ہے۔ایم بی سی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے الشمری نے بتایا کہ کئی لوگ ان سے مطالبہ کررہے ہیں کہ اپنی اس بیٹھک کو عجائب گھر میں تبدیل کردیں اور اسے دیکھنے کے لیے آنے والوں سے فیس وصول کرکے اپنی آمدنی کا ذریعہ بنائیں۔ ‘اس حوالے سے مسلسل دباؤ ہے لیکن میں اپنی روایت کو تبدیل کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا۔’الشمری نے بتایا کہ ’تقریباً 48 برس قبل بیٹھک قائم کی تھی- اس کا مقصد مہمانوں کی خدمت اور ان سے رشتے ناتے مضبوط کرنا تھا۔ بیٹھک قائم کرنےکا مقصد اس سے کچھ کمانا تھا اور نہ ہوگا۔ شکر ہے کہ دسیوں لوگ بیٹھک میں آتے جاتے رہتے ہیں۔’شیخ محمد بن جروح الشمری کا کہنا تھا کہ وزارت سیاحت نے انہیں بیٹھک کو عجائب گھر میں تبدیل کرنے کی پیشکش کی تھی لیکن شکر یے کہ ساتھ وزارت کی پیشکش مسترد کردی۔ ماضی کی طرح مستقبل میں بھی اپنی بیٹھک سیاحوں اور راہگیروں کے لیے کھلی رہے گی۔ اور یہ بیٹھک کو ہم اس طرح اباد رکھنے کی کوشش کرینگے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *