عمران خان کو چیلنج پارلیمنٹ میں اعتماد کا ووٹ لے کر دکھائیں

اپوزیشن اراکین نے پارلیمنٹ کے باہر احتجاج کرتے ہوئے عمران خان اور حکومت کے خلاف نعرہ بازی بھی کی، اور عوام کو بجٹ کے بعد آنے والے مہنگائی کے بارے میں خبردار کیا۔ اور کہاں کے اشیاء کی قیمت اتنی بڑھ جائے گی کہ ایک عام آدمی اس کو خرید ہی نہیں پائے گا۔ اور کہا کہ عمران خان دعویٰ کر رہا ہے کہ اپوزیشن ہمارے ساتھ ہیں تو ہم ان کو چیلنج کرتے ہیں کہ آپ اعتماد کا ووٹ لے کر دیکھ آئے۔ اور کہا کے موجودہ حکومت سے چھٹکارہ پانا اب لازم ہو چکا ہے۔

حکومت کے خلاف پارلیمنٹ کے اندر اور باہر احتجاج جاری رہے گا،ہم ہر سطح پر مقابلہ کریں گے ،فتح پاکستان کے عوام کی ہوگی۔ منگل کو پارلیمنٹ ہائوس کے باہر اپوزیشن جماعتوں کے اراکین نے حکومتی بجٹ ، مہنگائی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اس موقع پر اپوزیشن کی جانب سے چینی چور ، آٹا چور کے نعرے لگارہے تھے ،اسپیکر قومی اسمبلی کے خلاف بھی نعرے بازی کی گئی ۔ مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ دو سال ہوگئے حکومت (ن )لیگ اور پیپلز پارٹی پر کرپشن ثابت نہیں کرسکی ،کابینہ اور ایک سی کا ہر فیصلہ مشکوک ہے۔شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ حکومت نے مافیا کو سپورٹ کیا اور معیشت تباہ کردی۔شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ عوام سے یکجہتی کیلئے سڑکوں پر کھڑے ہیں ،اس حکومت نے ملک کی معیشت کو تباہ کیا ہے ،پاکستان کا مستقبل لوٹا ہے ،ملک میں غیر معمولی حالات ہیں ،قومی اسمبلی میں ایک سو بہتر ارکان ہونے چاہیں تاہم حکومت ایک سوساٹھ ووٹ لے سکی ،حکومت اعتماد کھو چکی ہے ،آج سی سی کا ہر فیصلہ مشکوک ہے ،مجھے اسمبلی میں 32 سال ہوگئے اتنی بے ہودہ گفتگو نہیں سنی ،چیلنج کرتے ہیں عمران خان اعتماد کا ووٹ لیکر دکھائیں ،اپوزیشن نے بجٹ کو مسترد کردیا ہے ۔

ملک کے حالات خراب سے خراب تر ہورہے ہیں اور ملک کو تباہی کے راہ پر گامزن کیا ہے لیکن یاد رہے کہ ہم ہر محاذ پر ان کے خلاف لڑیں گے اور فتح انشاءاللہ عوام کی ہوگی۔ خواجہ آصف نے کہا کے اس وقت ساری اپوزیشن جماعت یہاں پر موجود ہے حکومت نے بجٹ پر اکثریت حاصل نہیں کی حکومت اپنے اراکین اور اتحادیوں کا اعتماد کھو چکی ہے ہم نے پیٹرولیم اور دیگر اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ کے خلاف قرارداد جمع کروا دی ہے اخبار فتح عوام کی ہوگی اور موجودہ حکومت سے چھٹکارہ پانا ضروری ہو چکا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *