پرفیوم استعمال کرنے کا شوق

 اسلام آباد (این نیوز)بعض چیزوں کا شوق اس طرح ہوتا ہے کہ وہ ہر عام اور خاص بندوں میں پائی جاتی ہے جس میں ایک  پرفیوم استعمال کرنے کا شوق کس کو نہیں ہوتا تاہم بیشتر افراد خوشبویات کے استعمال کے حوالے سے زیادہ واقف نہیں ہوتے اور اس وجہ سے مہنگے سے مہنگے پرفیوم کی مہک بھی بہت جلد اڑ جاتی ہے۔ اصل میں پرفیوم لگانے کا جو طریقہ ہے وہ ہمارا غلط ہے درحقیقت مرد و خواتین کسی پرفیوم کو لگاتے ہوئے چند بڑی غلطیاں کرتے ہیں۔ جیسے گردن اور کلائی پر اس کا چھڑکاؤ، تاہم ماہرین کا کہنا ہے۔

 وہ اس جگہ کو نظر انداز کردیتے ہیں جو اس خوشبو کے دورانیے کو حقیقی معنوں میں اضافہ کرتی ہے۔ ایک پرفیوم کمپنی ٹکاساگو سے تعلق رکھنے والے اسٹیون کلایسی کے مطابق اگر آپ پرفیوم کی مہک پورے دن برقرار رکھنا چاہتے ہیں تو اپنی مرضی کی جگہ پر اس کے چھڑکاؤ کے ساتھ ساتھ ناف پر بھی چند بوندیں ٹپکا دیں۔ یہ تیکنیک کام کرتی ہے کیونکہ ناف جسم کا درمیانی حصہ ہے جو مناسب شرح میں حرارت خارج کرتی ہے اور پرفیوم کی مہک کو قدرتی پناہ گاہ فراہم کرتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جسم کا ہر وہ حصہ جو حرارت خارج کرتا ہے، پرفیوم کی مہک کو بڑھاتا ہے اور اس حوالے سے ناف بہترین ہے۔ ناف سے ہٹ کر کہنیوں کے اندر اور گھٹنوں کے پیچھے بھی یہ فائدہ حاصل کیا جاسکتا ہے۔ اونی ملبوسات بھی بہترین ثابت ہوتے ہیں اگر آپ پرفیوم لگانے کی شوقین ہوں اور مہنگی پرفیوم خرید کر کبھی خوشبو کم وقت تک رہتی ہے تو ہمارا یہ طریقہ ضرور اپلائی کرے اور ہمیں کمنٹ میں ضرور بتائیےخوشبوں کو پورا دن برقرار رکھنے کے لیے اس طریقے پر عمل کریں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *