پی آئی اے کے مشکلات میں دن بدن اضافہ

لاہور (نیوز ڈیسک) وفاقی وزیر ہوا باز چوہدری سرور کے پی آئی اے کے پائلٹ کے بارے میں بیان کے بعد پی آئی اے کے مشکلات میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ وزیر ہوا بازی نے کراچی کے حادثے کے بعد ایک بیان جاری کیا تھا جس میں اس نے کہا تھا کہ جعلی اسناد پر پی آئی اے میں پائلٹ بھرتی ہوئی ہیں جس کا نقصان ہمیں بھی بھگتنا پڑ رہا ہے۔ گزشتہ دن اومان کی فضائی کے بارے میں بھی ریڈ سگنل مل گیا ہے۔

تاہم سیول ایوی ایشن کے مطابق امان ایوی ایشن کو یقین دہانی دلائی گئی ہے۔ کہ فلائٹ سیفٹی یقینی بنانے کے لیے تمام پائلٹس کی اسناد کی جانچ پڑتال کی گئی ہے۔میڈیا رپورٹ میں ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ پی آئی اے کی سیفٹی کے حالیہ معاملے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے عمانی سول ایوی ایشن اتھارٹی نے پاکستان کو خبردار کیا ہے کہ پی آئی اے کو اس کی فضائی حدود کے استعمال سے روکا جاسکتا ہے۔ذرائع نے بتایا کہ عمانی حکام نے یہ بھی کہا ہے کہ وہ یہ بتائیں کہ پروازوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے کیا احتیاطی تدابیر اختیار کی گئی ہیں۔اس حوالے سے ذرائع نے مزید کہا کہ پاکستان سی اے اے نے عمانی سول ایوی ایشن اتھارٹی کو بتایا کہ جن پائلٹس کو پرواز کرنے کی اجازت دی گئی تھی ان سب کی اسناد کی جانچ اجازت دینے سے قبل کی جاچکی تھی۔اگرچہ عمانی سی اے اے نے سرکاری طور پر وہاں موجود پاکستانی پائلٹس کی تصدیق کے لیے کوئی مخصوص فہرست نہیں ارسال کی لیکن حکام نے صرف پاکستان سے یہ وضاحت طلب کی ہے کہ پروازوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے کیا احتیاطی تدابیر اختیار کی گئیں تاکہ پی آئی اے کو عمان کی فضائی حدود کے استعمال سے نہ روکا جائے۔ یاد رہے کہ حکومت کو چاہیے کہ اب وہ پی آئی اے کے اندر سخت سے سخت ایکشن لے تاکہ وہ غلطیاں ختم کر دیں جو پچھلی حکومتوں نے کی ہے۔ اور یہ ایک بار پھر اپنے پاؤں پر کھڑا ہوجائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *